( Death from cardiac arrest ) حرکت قلب بند ہونے سے اموات


The relationship between heart failure and diabetes.

 ان دنوں اس اقسام کی اموات بے حد ہو رہی ہیں اس کے مختلف اب اسباب آہستہ آہستہ پتہ چل رہے ہیں۔ جس سے ایک سبب یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ مریضوں کو ذیابطیس کی شوگر بند کرنے کے لئے بعض ایسی ادویات میں استعمال میں آ رہی ہیں جو کہ سمی اثرات کی حامل ہیں۔ حکیم محمد عبداللہ فرماتے ہیں کہ ایک دفعہ میرے پاس ایک لڑکی آئی۔ جو فاطمہ جناح میڈیکل کالج میں ایم بی بی ایس کی متعلمہ تھی اس نے ہماری دوا شوگرین طلب کی نیز یہ بھی دریافت کیا کہ کیا اس سے  شوگر یکدم تو بند نہیں ہو جاتی۔ کیونکہ میرے ایک عزیز نے کسی ڈاکٹر سے ایسی دوا لی جس سے شوگر کا آنا یکدم بند ہوگیا۔ اس کے چند روز بعد مریض حرکت قلب بند ہونے سے چل بسا۔ اب میں اپنے والد کے لیے دوا لے جا رہی ہوں کہ کہیں ایسی دوا نہ ہو جس کا نتیجہ برا نکلے۔ 
اسی طرح ایک دوسرا واقعہ بھی اسی قسم کا تحریرفرماتے ہیں کہ ایک اور صاحب محمدصدیق نامی کا انتقال بھی اسی طرح کے کسی شکر زنی کے طفیل ہوا۔ بہرحال جب تک ان ادویات کے متعلق ان کے سہی اجزاء کا بخوبی علم نہ ہو وہ ہرگز ہرگز استعمال نہیں کرنی چاہیے۔
The relationship between heart failure and diabetes.

( Zamzam water is the water of life for diabetes )آب زمزم ذیابیطس کے لیے آب حیات


 چشمہ زمزم کے پانی کے متعلق احادیث پاک میں بے حد تعریف کی گئی ہے۔ اور آہستہ آہستہ دنیا اس کے اثرات کے قائل محترم ہورہی ہے۔ چند سال پہلے لائن آرٹ پریس کے منیجر صاحب نے اپنے والد صاحب کا عجیب واقعہ سنایا کہ میرے والد صاحب مدت سے ذیابطیس شکری میں مبتلا تھے اور انہیں نے کسی سادھو سنیاسی کی تعریف سنی تھی کہ ان کے پاس اس مرض کا اکسیر علاج موجود ہے۔ سنیا سی صاحب بےعلم سنیاسی نہ تھے تعلیم یافتہ اور انگلینڈ ریٹرن تھے۔ والد صاحب کئی بار ان کے پاس گئے مگر حسن اتفاق سے  دوا تیار نہ تھی۔ اتنے میں والد صاحب حج بیت اللہ کی غرض سے اعظم حجاز ہوگئے۔ اور سنیاسی صاحب دوا لے کر پہنچ گئے اور مجھ سے فرمانے لگے تو میں نے ان سے کہا کہ والد صاحب تو حج کے لیے روانہ ہوگئے ہیں چار ماہ بعد آئیں گے تو پیش کردی جائے گی۔ سنیاسی صاحب نے فرمانے لگے اب انہیں میری دوا کی ضرورت بھی نہیں رہے گی کیونکہ وہ آب زمزم پینں گے اور اس میں ایسے اجزا موجود ہے کہ اس مرض کا نشان بھی نہ رہے گا۔  چار ماہ بعد والد صاحب تشریف لائے تو وہ تندرست تھے اس کے بعد پھر کبھی تکلیف نہیں ہوئی۔ ایک اور مشہور ڈاکٹر غلام حیدر سے کئی بار ٹیسٹ کروایا جو کہ بالکل ٹھیک آتا تھا 84 سال کی عمر میں وفات پائی. مگر اس مرض کا دوبارہ حملہ نہیں ہوا۔ البتہ ہندو سادھو موصوف نے یہ کہا تھا کہ کبھی کبھی تلسی کے پتے اور کالی مرچ کوٹ کر پلا دیا کریں ہم اس پر عمل کرتے رہے جو بہت مفید ثابت ہوئے۔

The relationship between heart failure and diabetes.