دنیا کے چار بڑے عجوبے۔

تاج محل۔
 شاہ جہاں کے دور تک مغلوں کی عظیم سلطنت پورے برصغیر میں پھیل چکی تھی ان کے خزانے منہ تک بھرے ہوئے تھے ممتاز محل بادشاہ کی تیسری اور لاڈلی بیوی تھی تاج محل دراصل  بادشاہ کی لاڈلی بیوی کا مزار ہے جو اس کے مرنے کے بعد بنوایا گیا تھا۔ کہتے ہیں تاج محل کو بنانے میں تین کروڑ 32 لاکھ روپے خرچ ہو گئے تھے اور سلطنت کنگال ہوگئی تھی اسی وجہ سے اورنگزیب نے باپ کو تخت سے اتار کر  قید خانے میں ڈال دیا تھا۔ کہتے ہیں بادشاہ نے تعمیر کرنے والے کاریگروں کے ہاتھ کٹوا دیے تھے تاکہ وہ کوئی ایسا اورمحل نہ بنا سکیں۔

دنیا کے چار بڑے عجوبے۔

 پیسا کا مینار۔

 یہ مینار اٹلی کے صوبے پیسا میں واقع ہے یہ مینار تعمیر کے وقت سے ہی جھکنا شروع ہوگیا تھا یہ پچاسی فٹ لمبا  اور اسکی 296 سیڑھیاں ہیں۔ یہ مینار 5.5 ڈگری جھکا ہوا ہے۔
دنیا کے چار بڑے عجوبے۔

 دیوار چین۔

 یہ دیوار چین کے شمالی کناروں پر واقع ہے یہ مشرق سے مغرب کی طرف جاتی ہے یہ 700 قبل از مسیح میں بنائی گئی تھی۔ اس کا مقصد شمال کی جانب سے آنے والے لشکروں کو روکنا تھا یہ دیوار کئی صدیوں میں تعمیر کی گئی یہ دیوار21396 کلومیٹر لمبی ہے کہتے ہیں یہ دیوار چاند سے بھی دیکھی جا سکتی ہے مگر اس بات میں کوئی صداقت نہیں۔
دنیا کے چار بڑے عجوبے۔

 کلو شیم

 یہ عمارت اٹلی کے شہر روم میں واقع ہے یہ عمارت کنکریٹ اور پتھروں سے بنائی گئی ہے اس میں تقریبا 80 ہزار افراد بیٹھ سکتے تھے یہ عمارت زلزلوں کی وجہ سے تباہ ہوگئی مگر اب بھی تھوڑی بہت باقی ہے اور سیاحتی طور پر استعمال کی جاتی ہے۔
دنیا کے چار بڑے عجوبے۔